تحصیل دینہ مزید قربانیاں کب تک دیتی رہے گی ہر شعبہ زندگی میں اس کو دانستہ محروم رکھا گیا ہے .چوہدری سلطان محمود صدر انجمن شہریان دینہ

(جہلم اخبار) فصیلات کے مطابق گزشتہ روز انجمن شہریان دینہ کا اجلاس زیر صدارت سلطان محمود ہوا ممبران شہریان دینہ نے حکومت پنجاب سے اپیل/ شکایت کی کہ ہماری تحصیل کو جملہ حقوق سے کیوں محروم رکھا گیا ہے صحت کارڈ جاری ہو چکا ہے مقام افسوس شہر کے کسی ایک ہسپتال کو بھی شامل نہیں کیا گیا سی ایم ایچ منگلا انتہائی قریب ہے مگر اس کو بھی شامل نہیں کیا گیا طالبات کے لیے ڈگری کالج موجود مگر بی ایس سی کی تعلیم دینے سے قاصر ہے کڑوروں روپے کے سالانہ اخراجات ہیں مگر بامقصد تعلیم نہیں دی جاتی منگلا روڈ پر سفر کرنا دشوار ہو چکا ہے مگر تاحال کسی ایم پی اے نے اس عوامی نوعیت کے معاملے پر توجہ دینا گوارہ نہیں کیا ضلع جہلم میں تحصیل دینہ واحد تحصیل ہے جہاں دکاندار منمانی کرنے میں مصروف ہیں بلاشبہ موجودہ اسسٹنٹ کمشنر دینہ نے چند روز قبل دکانداروں کو زائد قیمت وصول کرنے پر جرمانہ بھی کیا ہے مگر کاروبار کرنے والوں کی ذہنیت میں تبدیلی نہیں ہوئی معقول وجوہات کی بنا پر جی ٹی روڈ پر چلنے والی بسیں دینہ سٹاپ پر نہیں رکتی انتظامیہ کو اس طرف توجہ دینا ہوگی ان وجوہات کا تدارک کرنا ہوگا جس کی وجہ سے بسیں دینہ سٹاپ پر نہیں رکتی سٹریٹ کرائم میں اس قدر اضافہ ہوگیا ہے کہ شہری رات کو نیند کرنے سے قاصر ہوگئے ہیں پرائیویٹ تعلیمی ادارے حکومت پنجاب کی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے دکھائی نہیں دیتے بظاہر محسوس ہوتا ہے کہ عوام کو مزید ڈیڑھ سال قربانی دینا ہوگی شائد آللہ ہمارے حال پر رحم کرے اور ہم ان تکالیف سے نجات حاصل کر سکیں ۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+