پنجاب کیمپس جہلم کو بھی یونیورسٹی کا درجہ دیا جانا چاہیے تھا۔

یونیورسٹی آف سیالکوٹ اور نارووال میں موجود یونیورسٹی کیمپس کو یونیورسٹی کا درجہ دینا خوش آئند ہے لیکن جہلم میں پنجاب یونیورسٹی کیمپس کا وجود ان سے پہلے عمل میں لایا گیا ، لازم تھا کہ جہلم یونیورسٹی آف پنجاب جہلم کیمپس کو بھی یورنیورسٹی کا درجہ دیا جاتا، جہلم کی آبادی 12 لاکھ سے زائد افراد پر مشتمل ہے ضلع بھر کے طلبہ و طالبات تعلیمی لحاظ سے شدید مشکلات کا شکار ہیں لیکن بدقسمتی ہے کہ مقامی ایم این اے اور ایم پی اے کم تعلیم یافتہ ہیں انھیں تعلیم سے کوئی دلچسپی نہیں ، ان خیالات کا اظہار ضلعی جنرل سیکرٹری آل پاکستان مسلم لیگ شاہد کمال مرزا نے چاروں تحصیلوں سے آئے ہوئے ورکرز سے گفتگو کے دوران کیا، انہوں نے کہا کہ جہلم کے ساتھ یہ زیادتی ہم کسی صورت نہیں ہونے دیں گے اور ہر فورم پر اس معاملے کو اٹھائیں گے ، اس موقع پر خواتین ونگ کی ضلعی صدر سعیدہ مہناز نے کہا کہ تعلیم ہمارے بچوں کا بھی حق ہے ۔ جہلم کے طلبہ و طالبات کو بھی آگے بڑھنے کے مساوی مواقع میسر آنے چاہئیے ، سوچے سمجھے منصوبے کے تحت جہلم کے غیور باغیرت عوام کو تعلیمی لحاظ سے نظر انداز کیا جارہاہے جو کہ جہلم کے مقامی ایم ، این ،اے اور ایم بی اے کی نااہلی اور تعلیم سے عدم دلچسپی کا منہ بولتا ثبوت ہے ، اعلیٰ تعلیم اے پی ایم ایل کا منشور ہے ، انشاء اللہ ہم ضلع جہلم سمیت وطن عزیز کے بچوں کو اعلیٰ تعلیم کے مواقع مہیا کرنے میں ہر ممکن کوشش کریں گے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+