رمضان سے قبل ہی مہنگائی کے طوفان نے ملازم پیشہ اورغریب مزدورافراد کی کمر توڑ دی،پھل ہو یا سبزی دیہاڑی دارطبقہ کی قوت خرید سے باہرہوگیا

جہلم(سروے رپورٹ عمران جاوید خان)رمضان سے قبل ہی مہنگائی کے طوفان نے ملازم پیشہ اورغریب مزدورافراد کی کمر توڑ دی،پھل ہو یا سبزی دیہاڑی دارطبقہ کی قوت خرید سے باہرہوگیا،روزمرہ کے استعمال کی اشیاء آلو،پیاز،سبزیاں،دالیں،چاول،گھی کے نرخ جوں جوں رمضان قریب آرہا ہے دن بدن بڑھتے ہی جارہے ہیں جورمضان کریم میں روزے داروں کے بجٹ پراضافی بوجھ ہے ہر سال کی طرح اس بار بھی رمضان بازارلگانے کی تیاری زوروشورسے جاری ہے لیکن اس بازار سے پہلے بھی غریب کو ریلیف ملا اورنہ ہی اس بارملنے کی توقع ہے ویسے بھی رمضان بازارصرف فوٹوسیشن تک ہی محدود ہوتا ہے جس کے اخراجات کا بوجھ بھی عوام کو ہی برداشت کرنا پڑتا ہے علاوہ ازیں فروٹ وسبزی منڈی میں صبح بولی کے وقت مارکیٹ کمیٹی کا کوئی بھی نمائندہ موجودنہ ہونے کی وجہ سے آڑھتی دل کھول کر مہنگی اشیاء فروخت کرتے ہیں اورپھر پرچون دوکاندار رہی سہی کسر نکال دیتے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ خریدوفروخت کے توازن کو برقرار رکھنے کے لیے ضلع جہلم کے تمام تحصیلدار،اسسٹنٹ کمشنرز،سی او اورمارکیٹ کمیٹی کے عہدیداران روزانہ کی بنیاد پر بولی میں موجود ہوں اور بازاروں میں بھی ریٹ چیک کرتے رہیں تب جاکر ذخیرہ اندوزوں اورناجائز منافع خوروں کے ستم سے عوام کو ریلیف مل سکتا ہے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+