امانت علی ولد محمد علی مرحوم کے گھر ڈکیتی کرنے والے گینگ کا تا حال پتہ نہ چل سکا، تھانہ صدر پولیس سٹیشن میں ابھی تک ایف آئی آر بھی نہیں کاٹی گئی۔پولیس مجرموں کا سراغ لگانے میں ناکام

جہلم(نمائندہ اپنا اخبار ڈاٹ کام)امانت علی ولد محمد علی مرحوم کے گھر ڈکیتی کرنے والے گینگ کا تا حال پتہ نہ چل سکا، تھانہ صدر پولیس سٹیشن میں ابھی تک ایف آئی آر بھی نہیں کاٹی گئی۔پولیس مجرموں کا سراغ لگانے میں ناکام۔تفصیلات کے مطابق سات روز قبل نوگراں شریف کے رہائشی امانت علی دوکاندار کے گھر رات کو ڈکیتی ہوگئی تھی اور ڈاکو پچاس ہزار کیش اور سات لاکھ مالیت کے سونے کے زیورات لیکر رفو چکر ہو گئے تھے جس پر مذکورہ گاؤں کے دونوں نمبر دار حاجی راجہ رب نواز خان اور صوبیدار راجہ غضنفر اعظم کی زیر نگرانی تھانہ صدر سب انسپکٹر خادم حسین کو درخواست دی گئی تھی۔حالانکہ اس واقعے پر درخواست کے ساتھ ایف آئی آر کا اندراج ہونا چاہیے تھا مگر متعلقہ نمبرداروں نے اس ضمن میں کوئی خاص ایکش نہ کروایا جس کا نتیجہ یہ نکلا کہ ابھی تک مجرموں کو کوئی پتہ نہیں چل سکا۔ہمارے نمائندے عارف محمود قریشی کو امانت علی نے بتایا کہ آج سات دن ہوگئے میری تمام جمع پونجی چلی گئی مگر پولیس نے ابھی تک مجرموں کا سراغ نہیں لگا یا ہے۔نہ ہی ایف آئی آر کی کاپی درج ہوئی اور نہ ہی درخواست کی کاپی مجھے دی گئی ہے۔امانت علی نے وزیر اعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب، آرپی او ریجن تھری راولپنڈی اور ڈسٹرکٹ پولیس آفیسرایس ایس پی جہلم سے یہ پر زور اپیل کی ہے کہ میں ایک معمولی دوکاندار ہوں خدارا اس کی داد رسی کی جائے اور جلد از جلد باقاعدہ ایف آئی آر درج کر کے باضابطہ قانونی کارروائی کر کے مجرموں کا پتہ لگایا جائے اور ان کے نقصان کی تلافی کی جائے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+