تحصیل دینہ گاؤں رْپڑ کی رہائشی بیوہ نسیم اختر کی زمین پر علاقہ کے بااثر شخصیات کا ناجائز قبضہ عدالتی حکم بھی ہوا میں اڑا دئیے حکام بالا سے نوٹس لینے کی اپیل

جہلم(نمائندہ جہلم اخبار ڈاٹ کام) بیوہ کی زمین پر علاقہ کے بااثر شخصیات کا ناجائز قبضہ عدالتی حکم بھی ہوا میں اڑا دئیے حکام بالا سے نوٹس لینے کی اپیل۔ تفصیلات کے مطابق تحصیل دینہ کے نواحی گاؤں رْپڑ کی رہائشی بیوہ نسیم اختر کا اپنے گاؤں کے صوبیدار مشتاق وغیرہ کے ساتھ کافی عرصہ سے زمین کا تنازع چل رہا تھا جس پر نسیم اختر نے عدالت سے اسٹے آرڈر لے رکھا ہے اور اس بابت متعلقہ تھانہ دینہ کو بھی ایک کاپی فراہم کر دی گئی تھی۔گزشتہ روز ان بااثر لوگوں جن میں صوبیدار مشتاق،شاہد مشتاق، رضوان کیانی،نسیم کمال اور شبیر حسین شامل ہیں نے عدالتی حکم کو ہوا میں اڑا دیا اور بیوہ نسیم اختر کی ایک کنال سات مرلہ اراضی پر ناجائز طور پر زبردستی اپنا قبضہ جما لیا جبکہ موقعہ پر عدالتی اہلکار کی طرف سے اسٹے آرڈر کی کاپی بھی دکھائی گئی جسے ان بااثر لوگوں نے ماننے سے انکار کر دیا اور ناجائز قبضہ کر لیا۔ پولیس تھانہ دینہ کے پی ٹی سی ایل نمبر پر بارہا دفعہ فون کیا گیا لیکن پولیس نے روایتی بے حسی برقرار رکھی اور موقعہ پر نہ پہنچی۔ بیوہ نسیم اختر نے اپنی اور اپنے اہل خانہ کی جان کے تحفظ اور ان کے ساتھ ہونے والی اس انتہائی زیادتی پرچیف جسٹس آف پاکستان، وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب،ڈی سی جہلم اور ڈی پی او جہلم سے پر زور اپیل کی ہے کہ انہیں ان بااثر لوگوں سے تحفظ فراہم کیا جائے اور انصاف کے تقاضوں کو پورا کرتے ہوئے انہیں ان کا حق واپس دلایا جائے اور اس ظلم اور زیادتی پر فوری طور پر نوٹس لیا جائے۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on Google+